امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی سعودی عرب آمد کے حوالے سے سعودی علماء کیا کہتے ہیں ؟

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جمعے کی روز اپنے پہلے بین الاقوامی دورے پر سعودی عرب پہنچ رہے ہیں ، سعودی گیزٹ کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ اپنے دورے کے دوران ریاض میں ٥٠ مسلمان و مسلمان اکثریتی ممالک کے نمائندوں سے ” اسلام امن کا مذہب اور دہشت گردی بین الاقوامی خطرہ ” کے ٹاپک پر خطاب کریں گے –

اس حوالے سے سعودی عرب میں سینئر علماء کمیٹی کے سکریٹریٹ سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ امن و سلامتی کے حوالے سے عوام کی امیدوں کو پورا کرنے کے لیے عرب اسلامی امریکی سربراہ اجلاس کا انعقاد نہایت اہمیت کا حامل ہے – یہ انسانوں کی مشترکہ مصلحت کا تقاضہ ہے جس پر تمام تر آسمانی شریعتوں نے زور دیا –

سکریٹریٹ کی جانب سے بدھ کے روز جاری بیان کے مطابق ” اس اجلاس کا حرمین شریفین کی خادم مملکت سعودی عرب کی سرزمین پر انعقاد اس کی عظیم اہمیت کا پتہ دیتی ہے – دہشت گردی جس نے دنیا بھر میں بہت سے مقامات کو کاری ضربوں کا نشانہ بنایا – یہ سب کے لیے خطرہ ہے ، اس کو مربوط مذہبی ، سیاسی ، سکیورٹی ، نظریاتی اور اقتصادی نظام کے بغیر شکست نہیں دی جا سکے گی – اس کا انسداد ملکوں اور عوام دونوں کی سطح پر ہونا چاہیئے ، تمام لوگ ایک ہی کشتی کے سوار ہیں لہذا ذمے داری کا سنجیدگی سے احساس ہونا چاہیئے – اس سلسلے میں تساہل اور غیر ذمے داری کا نتیجہ انارکی اور انتشار کی صورت میں سامنے آئے گا ” –

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں