اڑنے والی کار کے بعد فلائنگ بائیک بھی اب مارکیٹ‌میں

واشنگٹن (ویب ڈیسک ) ویسے تو اب تک اڑنے والی گاڑیاں ہی تیار کی جا رہی ہیں مگر گوگل کے شریک بانی لیری پیج اڑن موٹرسائیکل کو رواں سال کے آخر تک فروخت کے لیے پیش کرنے والے ہیں۔ گوگل کے شریک بانی لیری پیج کافی عرصے سے خاموشی کے ساتھ دو کمپنیوں کے ساتھ مل کر اڑنے والی سواریوں کی تیاری پر کام کر رہے تھے۔ اب ان میں سے کیٹی ہاک نامی کمپنی نے آخرکار پہلی اڑنے والی گاڑی یا یوں کہہ لیں موٹرسائیکل کا تجربہ کیا ہے اور یہ عام افراد کے لیے رواں سال کے آخر تک دستیاب ہوگی۔ کیٹی ہاک کے صدر سبسٹین تھرون نے ایک ٹوئیٹ میں اپنی کمپنی کے ویب سائٹ کا ایک لنک شیئر کیا جس میں فلائیر نامی اس سواری کے پروٹوٹائپ کی ویڈیو اپ لوڈ تھی۔ یہ پروٹوٹائپ ایک موٹرسائیکل جیسے برقی ایئرکرافٹ کا ہے جس کے حتمی ورژن پر ابھی کام جاری ہے جو اس سے کچھ مختلف ہوسکتا ہے۔ اس سواری کا وزن سو کلوگرام تک ہے اور یہ 25 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرسکتی ہے۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں