تیر ے عشق نچایا کر کے تھیا تھیا​

تیر ے عشق نچایا کر کے تھیا تھیا​
تیرے عشق نے ڈ یرا میر ے اندر کیتا
بھر کے زہر پیالہ میں تاں آپے پیتا
جھبدے بوہڑیں وے طبیبا، نہیں تاں میں مر گئی آ​
تیر ے عشق نچا یا کر کے تھیا تھیا​
چھپ گیا وے سورج باہر رہ گئی آ لا لی
وے میں صد قے ہوواں دیویں مڑجے دکھالی
پیرا ! میں بھل گئی آں، تیرے نال نہ گئی آ​
تیر ے عشق نچا یا کر کے تھیا تھیا​
ایس عشق دے کولو ں مینوں ہٹک نہ مائے
لاہور جانڈرے بیڑے کیہڑ ا موڑ لیائے
میری عقل جو بھلی نال مہانیاں دے گئی آ​
تیر ے عشق نچا یا کر کے تھیا تھیا​
ایس عشقے دی جھنگی وچ مور بولیندا
سانو ں قبلہ تے کعبہ سوہنا یار ڈسیندا
سانو ں گھائل کر کے فیر خبر نہ لئ آ​
تیر ے عشق نچا یا کر کے تھیا تھیا​
بلھا شاہ نو سَدُوشاہ عنایت دے بوہے
جس نے مینو ں پوائے چولے ساوے تے سوہے
جاں میں ماری ہے اڈی مڑ پِیا ہے ر ہیا​
تیر ے عشق نچا یا کر ے تھیا تھیا

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں