سو لفظوں کی کہانی…..مبشر زیدی

’’یورپ کے جس علاقے میں پاکستانیوں کی اکثریت ہوجاتی ہے،
وہاں رفتہ رفتہ تین قسم کی دکانیں بند ہوجاتی ہیں۔‘‘
برسلز میں ایک دوست نے بتایا۔
’’اچھا! کون کون سی؟‘‘ میں نے پوچھا۔
’’ایک شراب کی۔ دوسری سور کے گوشت سے بنے کھانوں کی۔‘‘
دوست نے کہا۔
میری خوشی کی انتہا نہ رہی۔
’سمندر پار پاکستانیوں نے اپنے بزرگوں کی روایتیں برقرار رکھی ہیں۔‘
میں نے سوچا۔
لیکن پھر مجھے کچھ خیال آیا۔
’’تم نے دو طرح کے کاروبار بتائے۔
اور کون سی قسم کی دکانیں پاکستانیوں کے علاقوں میں بند ہوجاتی ہیں؟‘‘
دوست نے نگاہیں چُراکے کہا،
’’کتابوں کی!‘‘

انتخاب: سرور اقبال

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں