ڈیڑھ لاکھ افراد اگلے چھ ماہ میں ہیضے کا شکار ہو سکتے ہیں

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے سربراہ برائے امداد سٹیفن او برائن کا کہنا ہے کہ یمن مکمل طور تباہ ہو رہا ہے، عوام کو جنگ، قحط اور ہیضے کا سامنا ہے اور دنیا خاموشی سے دیکھ رہی ہے – سٹیفن نے سکیورٹی کونسل میں خطاب کے دوران کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ دنیا کی سب سے بڑی خوراک کی ایمرجنسی کو ختم کیا جائے اور یمن کو واپس بقا کے راستے پر لایا جائے – رواں سال اپریل سے اب تک ہیضے کے باعث 500 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 55 ہزار یمنی بیمار ہیں۔ اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق 55 ہزار بیمار افراد میں سے ایک تہائی بچے ہیں ۔ اقوام متحدہ کے مطابق مزید ڈیڑھ لاکھ افراد اگلے چھ ماہ میں ہیضے کا شکار ہو سکتے ہیں –

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں